ملالہ یوسف زئی کے والد کا اعتراف کہ یہ کتاب کرسٹینا لیمب نے لکھی ہے

hamid-mir3

امریکی ویزا سسٹم کا آخری سال ۔۔۔ آپ اس سے کس طرح فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔۔۔۔ تفصیل لنک میں ۔۔۔۔

1385736_754450347902551_918330363_n
Last Year of US Lottery System

پاکستان کے پہلے وزیراعظم ہیں

وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف پاکستان کے پہلے وزیراعظم ہیں جن سے چینی صدر شی جین پنگ نے نہ صرف ملاقات کی بلکہ پورے وفد کے اعزاز میں استقبالیہ بھی دیا جو پاکستان چین دوستی کی روشن مثال اور میاں نواز شریف سے چینی حکومت کے خصوصی تعلقات کی عکاسی کرتی ہے۔ پروٹوکول کے تقاضوں کے مطابق غیر ملکی سربراہوں سے صرف وزیر اعظم ملاقاتیں کرتے ہیں، چینی صدر کبھی غیر ملکی سربراہوں سے ملاقات نہیں کرتے۔ چین کی تاریخ کا یہ پہلا موقع ہے کہ چینی صدر نے کے وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف بلکہ ان کے وفد سے بھی ملاقات کی اور انہیں استقبالیہ پر بھی مدعو کیا۔ سفارتی حلقوں میں چینی صدر چینی کے اس خیر سگالی کے جذبات کو خصوصی اہمیت دی گئی ہے، حالیہ دورہ کے دوران پاکستان سے کئے جانے والے معاہدے اس بات کی عکاسی کرتے ہیں کہ مستقبل میں چین پاکستان سے تعلقات کو خصوصی اہمیت دے گا۔ سفارتکاروں کے مطابق چینی صدرکی میاں نواز شریف سے ملاقات خصوصی اہمیت کی حامل ہے اور سفارتی حلقوں میں اسے بہت اہمیت دی جا رہی ہے۔

وزیراعظم نوازشریف بُلٹ ٹرین کے ذریعے بیجنگ سے شنگھائی پہنچ گئے

وزیراعظم نوازشریف بُلٹ ٹرین کے ذریعے بیجنگ سے شنگھائی پہنچ گئے

جو ڈٹے ہوئے ہیں محاذ پر

جو ڈٹے ہوئے ہیں محاذ پر

تحریر : ڈاکٹر اسلم فہیم

مصر میں ایک منتخب حکومت کا تختہء الٹ کر اس کے خلاف فوجی بغاوت پر دنیا میں جمہوریت کے نام نہاد ٹھیکیداروں کی خاموشی اس بات کا ثبوت ہے کہ انہیں اسلام کے نام لیواؤں کی حکومت کسی صورت پسند نہیں خواہ وہ جمہوری عمل کے ذریعے ہی عمل میں کیوں نہ آئی ہو۔ یہ جمہوریت کے دعویدار صرف لادین حکومتوں کے محافظ ہیں خواہ وہ کوئی آمر ہی کیوں نہ ہو۔ سعودی فرمانروا شاہ عبداللہ کی طرف سے مصر کے فوجی آمروں کو مبارکباد اور انہیں خوش آمدید کہنے کے پیغامات بھی اس بات کا ثبوت ہیں کہ عالم اسلام کی تمناؤں اور آرزوؤں کے مرکز پر متمکن حکمران بھی خواب غفلت سے بیدار ہونے کو تیار نہیں۔ اور مسلمانوں کے قبلہ وکعبہ کے خادمین کا قبلہ “کہیں اور” ہے۔

مصر میں دنیا کی سب سے زیادہ منظم اسلامی تحریک اخوان المسلمون کے قائداور امام حسن البناء کے جانشین محمد بدیع لاکھوں کےمجمعے سے مخاطب تھے تو مین سوچ رہا تھا کی کیا گولیوں کی بوچھاڑ، آنسو گیس کی شیلنگ،اور ساتھیوں کی شہادتیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ان کے حوصلے پست کر سکتی ہیں کہ جنہوں نے اس ملک مین بدترین آمریت کےکئی سال اپنی جوانیاں جیلوں کی نظر کر دیں۔

مصری فوج کو یقین تھا کہ محمد بدیع کبھی منظر عام پر نہیں آئیں گے اس لئے اس نے مرشد عام کی گرفتاری کی افواہ پھیلا کر کارکنوں کے حوصلے پست کرنے کی ایک ناکام کوشش کی لیکن کل شام محمد بدیع کی منظر عام پر آمد اور آمروں کے خلاف للکار نے فوج پرہیبت طاری کر دی ہے۔انہوں نے مظاہرین کے جس اجتماع سے خطاب کیا ہے اس اجتماع کی مثال حسنی مبارک کے خلاف تحریک میں بھی نہیں ملتی۔

مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مرشد عام اخوان المسلمون کا کہنا تھا
اے عظیم مصر کے نوجوانو۔۔۔۔۔۔۔۔ ہمیں تم پر فخر ہے۔۔۔۔۔۔ہمیں ان پر بھی فخر ہےجو شہید ہو گئے۔۔۔۔۔کل تک وہ آپ کے درمیان تھے ۔۔۔۔۔۔۔۔آج وہ ایک عظیم مقصد کیلئےہو گئے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ہمیں فخر ہے ان پر جو جیلوں میں ڈال دئے گئے اور جو عدالتوں میں گھسیٹے جا رہے ہیں لیکن سن لو کہ یہ سب کچھ رائیگاں نہیں جائے گا۔۔۔۔۔۔ ہم بھاگے نہیں ہم گرفتار نہیں ہوئےکیونکہ ہم چور اچکے اور دہشت گرد نہیں ہیں۔۔۔۔۔۔ ہم ایک عظیم انقلاب کیلئے میدان میں نکلے ہیں ہم اس وقت تک لاشیں اٹھانے سےنہیں گھبرائیں گے جب تک مصر کے فرعونوں کو گھر نہیں بھیج دیتے۔ہم کسی بھی صورت شہداء کے خون سے سینچے گئے انقلاب کو ضائع نہیں ہونے دیں گے۔ ہم پر امن جدوجہد کے حامی ہیں اور پرامن جدوجہد سےمصر کو حقیقی انقلاب کی طرف لائیں گےتم ہمیں ٹینکوں سے ڈراتے ہو تو سن لو کہ ہمیں موت سےڈرانا ممکن نہیں

ہم نہ تو عبوری حکومت کو مانتے ہیں اور نہ ہی کسی نئے الیکشن کو ، مرسی آج بھی مصر کے صدر ہیں ، ان کی واپسی تک کسی قسم کے مذاکرات نہیں ہوں گے ۔

اب منظر کچھ یوں لگ رہا ہے کہ تحریر سکوائرمیں میدان ایک بار پھرسجنے کو ہے لیکن یقینی طور پر اب کی بار اس میدان میں لادین اور سوشلسٹ نہیں بلکہ اللہ کے دین کیلئے اپنی جانوں کے نذرانے پیش کرنے والے اخوان اپنی محفل سجائیں گے۔ یہ تحریک کب اور کیسے اپنی منزل تک پہنچتی ہے یہ تو وقت ہی بتائے گا لیکن ایک بات طے ہے کہ

بالآخر اللہ کا کلمہ ہی بلند ہو کر رہے گا

بشکریہ : ڈاکٹر اسلم فہیم

پارٹی عہدہ چھوڑنے سے انکار

وزیر اعلی پرویز خٹک نے پارٹی عہدہ چھوڑنے سے انکار کر دیا “پارٹی کا منتخب جنرل سیکٹری ہوں عہدہ نہیں چھوڑوں گا ، وزارت اعلی پارٹی کی امانت ہے ، جب چاہے واپس لے لیں”. پرویز خٹک نے عمران خان کو صاف جواب دے دیا

قاتل بچ نہیں پاے گا

عمران فاروق کا قتل سیاسی نویت کا تھا..میں اس سارے کیس کی تفتیش میں پیش پیش رہا ہوں…اس کے اوپر بہت شفاف طریقے سے تفتیش ہو رہی ہے اور قاتل بچ نہیں پاے گا – لارڈ نذیر احمد

نصیر باد: جعفر آباد کےعلاقے باغ ہیڈ میں دشمنی پر فائرنگ،ایک ہی خاندان کے 3افراد ہلاک،پولیس

نصیر آباد: جعفر آباد کےعلاقے باغ ہیڈ میں دشمنی پر فائرنگ،ایک ہی خاندان کے 3افراد ہلاک،پولیس

ایم کیو ایم کا مستقبل کیا ہوگا

آج کل ایک موضوع پاکستانی میڈیا میں بہت مقبول ہے، ایم کیو ایم کا مستقبل کیا ہوگا اگر الطاف حسین کو لندن میں کرمنل کیسز میں چارج کردیاگیا! میٹروپولیٹن پولیس نے الطاف کےگھر پر پچپن گھنٹے تک تلاشی لی، مگر پاکستانی “آزاد میڈیا” اپنے لبوں پر زپ لگا کے بیٹھا رہا اگر شہ سرخیاں لگی بھی تو یہ کہ ایک اہم شخصیات کےگھر پر تلاشی لی گئی ہے مگر اس شخصیت کا نام پاکستانی میڈیا پر اس وقت تک نا پید رہا جب تک الطاف حسین نے اپنے کارکنوں سے خطاب کے دوران بلی کوخود ہی تھیلے سے باہرنہیں نکال دیا۔

چئیر مین بننے کا کوئی ارادہ نہیں

میرا پی سی بی کا چئیر مین بننے کا کوئی ارادہ نہیں تھا جیسے پہلے راتوں رات فون آیا تھا کہ یہ پولیٹیکل ہے نیوٹرل جاب ہے نیشنل انٹرسٹ ہے ایک نیشنل کمیشن ہے تو اسے کرنا چاہیے ، جب اسلام آباد میں میاں صاحب نے یاد کیا تو پہلے وہ ادھر ادھر کی باتیں پوچھنے لگے کہنے لگے کہ فلاں فلاں جگہ میں نے اپائنٹمنٹ کی ہے میں نے کہا کہ یہ ٹھیک ہے اور یہاں پرابلمز ہیں پھر کہنے لگے کہ آپ فلاں فلاں چیز کیوں نہیں کر سکتے . کچھ میری تعریفیں کیں اور پھر میرا ہاتھ پکڑ کر کہنے لگے کہ آپ چیئر مین پی سی بی بن جائیں میں نے کہا کہ میں ؟ پھر انہوں نے بات کی اور کہا کہ اس میں کرپشن ہے سفارشات ہیں ایک قومی ٹیم کا مسلہ ہے اربوں روپے کی وہاں پرابلمز اور آمدن ہے اور خرچے بہت زیادہ ہیں وہاں پر چودھری نثار بھی آ گئے میاں صاحب نے انھیں بتایا اور چودھری نثار بولے گڈ ، ایکسیلنٹ! اگر مجھے انٹیرئر منسٹری نہ دی گئی ہوتی تو میں پی سی بی کا چیئر مین بننا پسند کرتا ، اوپر سے میاں صاحب کہتے کہ اگر میں پرائم منسٹر نہ ہوتا تو میں بنتا تو آپ کیسے ناں کر سکتے ہیں

Older posts «